آئلی سکن کئیر ٹپس

ads

انسانی جلد کواس میں پائے جانے والے ہارمون کنٹرول کرتے ہیں۔ اور اگر ان ہارمونز کی کارکردگی میں کسی وجہ سے کوئی خلل پیدا ہو یا توازن نہ رہے تو جلدی مسائل جنم لیتے ہیں۔ آئلی سکن جلد کی اقسام میں خشک جلد کے بعد سب سے زیادہ پریشان کرنے والی دوسری قسم و ہے۔ اور گرمیوں میں خاص طور پر اس قسم کی جلد والے لوگوں کو مسائل کا سامنا رہتا ہے۔

بعض افراد کی جلد قدرتی طور پر آئلی ہوتی ہے جب کے زیادہ تر افراد بلخصوص لڑکیوں میں آئلی جلد کا مسلہ چودہ – پندرہ سال کی عمر میں پیدا ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ جلد آئلی ہونے کی بڑی وجہ ہارمونز میں تبدیلی بھی ہے۔ ان ہارمونز کی حد سے زیادہ سرکرمیوں کی وجہ سے  چکناہٹ پھیل جاتی ہے جسکی وجہ سے انسانی جلد بلیک ہیڈز، داگ دھبوں اور ایکنی جیسے مسائل کا شکار ہو جاتی ہے۔

جن افراد بلخصوص لڑکیوں کی جلد چودہ – پندرہ سال کی عمر سے چکنی ہو جائے اور مختلف مسائل پیدا ہونے لگیں اور اگر وہ اسی وقت مناسب دیکھ بھال اور احتیاط کرنا شروع کردیں تو آئلی جلد کے مسائل پر قابو پایا جا سکتا ہے۔

آئلی سکن کیئر ٹپس

اگر آپ کی جلد بھی آئلی ہے اور آپ اس کی مناسب دیکھ بھال کے کرنا چاہتے ہیں تو مندرجہ ذیل آئلی سکن کئیر ٹپس پر عمل کریں اور اپنی جلد کو خوبصورت اور دلکش بنائیں۔

Oily skin care in Urdu, آئلی سکن کئیر ٹپس
چکنی جلد پر صابن، کریم یا لوشن کا استعمال نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ اس لئے جلد کو دھونے کیئےعام صابن، لوشن یا کریم کے بجائے اگر کسی اچھے کلینزنگ  سوپ کا استعمال کیا جائے تو بہتر ہے۔

چکنی جلد والے افراد کو اپنی جلد کو گرد و غبار سے بچانے کیلئے مناسب تدابیر اپنانی چائیں کیونکہ چہرے پر گرد و غبار جلد کے مساموں کو بند کر دیتا ہے اور جلد میں مزید پچیدگیوں کا پاعث بنتا ہے۔ اس لئے جب بھی آپ گھر سے باہر جائیں تو واپسی پر جلد کو لازمی دھوئیں۔

کم از کم دن میں تین سے چار بار منہ اور ہاتھ دھوئیں، اور کم از کم دن میں آٹھ گلاس پانی پئیں۔

چکنی جلد والے افراد چکنیائی والی اور تلی ہوئی روغن اشیاء کھانے سے پرہیز کریں، کیونکہ چکنی اور تلی ہوئی اشیاء کے استعمال سے معدہ اضافی چکنائی کی مقدار ہضم نہیں کر سکتا اور چکنائی جلد کے مساموں سے خارج ہونے لگتی ہے۔ میٹھی اور چکناہٹ والی غذائوں کی بجائے اپنی روز مرہ غذاء میں پھلوں سبزیوں اور پانی کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں۔

آئلی سکن کیئر ماسک

چکنی جلد کی حفاظت کیلئے فیشل ماسک اور صفائی کیلئے اسٹیم بہت فائدہ مند ہے۔ ماسک کے استعمال سے آپ کیل مہاسوں، ایکنی، وائیٹ اور بلیک ہیڈز جیسے مسائل سے چھٹکارا حاصل کر سکتے ہیں۔ ماسک کا استعمال چکنی جلد کی حفاظت کا سستا اور آسان طریقہ ہے مندرجہ ذیل میں چکنی جلد کی دیکھ بھال کیلئے چند گھریلو ماسک بنانے کے طریقے بتائے گئے ہیں جن کو استعمام کر کے آپ بہت جلد چکنی جلد کے مسائل پر قابو پا سکتے ہیں۔

چکنی جلد سے چھٹکارا حاصل کرنے کیلئے ہفتے میں ایک بار کیلے اور لیمن جوس کا ماسک لازمی استعمال کریں۔ ماسک بنانے کیلئے ایک عدد کیلا لیں اور اسے پیالے میں چمچ کی مدد سے میش کر لیں اور اس میں چند قطرے لیموں کا رس ڈال کر اچھی طرح مکس کر لیں۔مکسچر کو چہرے پر لگائیں اور دو گھنٹے بعد صاف پانی سے دھو لیں۔

Oily skin care in Urdu, آئلی سکن کئیر ٹپس
پھٹکری اور عرق گلاب کا ماسک چکنی جلد کیلئے بہترین ٹونز کا کردار ادا کرتا ہے۔ ماسک بنانے کیلئے 20 گرام پھٹکری کو 300 ملی لیٹر پانی میں اُبال لیں۔ پانی ٹھنڈا ہونے پراس میں اتنی ہی مقدار میں عرق گلاب شامل کریں اور تین سے چار لیموں نچوڑ لیں۔ اس عرق کو شیشے کی بوتل میں ڈال کرفریج میں رکھ دیں۔ دن میں دو بار روئی پہ لگا کر چہرے اور ہاتھون کو صاف کریں اور 30 سے 40 منٹ بعد صاف پانی سے دھو لیں۔

چکنی جلد کی حفاظت کیلئے آپ سکرب کا استعمال بھی کر سکتے ہیں۔ گھریلو سکرب بنانے کیلئے تقربیاً 30 گرام چینی میں 3 چمچ دہی اور ایک چمچ شہد ملا لیں۔ اس مکسچر کو چہرے پر لگائیں اور ہلکے ہاتھوں سے 20 منٹ تک مساج کریں اور ٹھنڈے پانی سے دھو لیں۔ ہفتے میں کم از کم دو بار اس سکرب کے استعمال سے چہرے پر نکلنے والے باریک دانے ختم ہو جائیں گے اور دوبارہ نہیں نکلیں گے۔

چہرے سے گرد وغبار اور سیاہی دور کرنے کیلئے دودھ اور لیمن جوس کا ماسک بہترین ہے۔ ماسک بنانے کیلئے 2 کھانے کے چمچ دودھ میں دو کھانے کے چمچ لیموں کا رس، دو کھانے کے چمچ صندل پائوڈر اور چٹکی بھر ہلدی ڈال کر اچھی طرح مکس کرلیں اور چہرے پر لگائیں۔ جب ماسک اچھی طرح خشک ہو جائے تو نیم گرم پانی سے دھو لیں۔ بہترین نتائج کیلئے اس ماسک کو کم از کم ہفتے میں دو بار لازمی استعمال کریں۔

اسکے علاوہ آپ آئلی سکن کیلئے انڈے اور شہد کا ماسک بھی استعمال کر سکتے ہیں۔ ماسک بنانے کیلئے ایک انڈے کی سفیدی، 1 چائے کا چمچ لیمن جوس اور 1 چمچ شہد ملا کر اتنا مکس کریں  کہ مکسچر میں جھاگ بننے لگے۔ اب اس ماسک کو چہرے پر اپلائی کریں، خیال رکھیں یہ ماسک آنکھوں اور ہونٹوں پر نہ لگے۔ تقربیاً 20 منٹ بعد چہرے کو صاف پانی سے دھو لیں۔ ہفتے میں دو بار اس ماسک کو استعمال کرنے سے چہرہ تر و تازہ اور کھلے مسام بند ہو جائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں