حمل ٹیسٹ

ads

مرد جب 4 سے پانچ دن بعد اپنی بیوی کے ساتھ جماع کرتا ہے تو خارج ہونے والی منی (Semen) کی مقدار تقریباً 3.5 ملی لیٹر ہوتی ہے. خارج ہونے والی اس منی میں تقریباً 30 سے 40 کروڑ سپرم موجود ہوتے ہیں اور صحت مند بچے کی پیدائش کے لیے ضروری ہے کہ خارج ہونے والی منی میں 2 کروڑ نطفے موجود ہوں. جماع کے عمل میں 4 کروڑ نطفوں میں سے صرف 2 ہزار کے لگ بگ سپرم انڈے تک پہنچتے ہیں اور ان میں سے ایک بیضے کو بارآور کرتا ہے.

اگر روزانہ ایک دن چھوڑ کر بیوی کے ساتھ ہمبستری کی جائے تو پہلے ماہ بیوی کے حاملہ ہونے کے امکانات 60 فیصد تک بڑھ جاتے ہیں. ہمبستری کیلئے مشنری طریقہ استعمال کیا جائے. یعنی بیوی نیچے ہو، اس کی کمر کے نیچے تکیہ ہو، دخول گہرا ہو اور انزال کے بعد خاوند عضو تناسل کو فورا باہر نہ نکالے بہترھیکہ عضو خود سکڑ کر فرج سے باہر آئے. ورنہ منی کا بہت سا حصہ فرج سے باہر آ جائے گا جس سے سپرم کی تعداد کم ہو جائے گی اور حمل کا امکان بھی کم ہو جائے گا. انزال کے بعد بیوی 30 منٹ تا 1 گھنٹہ تک اسی حالت لیٹی رہے. اس طرح مباشرت سے بیوی کے حاملہ ہونے کے امکانات میں کافی اضافہ ہو جاتا ہے.

اگر آپ میں حمل کی ابتدائی علامات ظاہر ہو چکی ہیں اور آپ حاملہ ہونے کی امید رکھتی ہیں تو اس پوسٹ میں آپ جان سکیں گی کہ کیسے آپ ڈاکٹر کے پاس جائے بغیر اپنے حاملہ ہونے یا نہ ہونے کی تصدیق کر سکتی ہیں.

حمل ٹیسٹ

جیسا کے آپ جانتی ہیں کہ حمل کی پہلی اور بڑی نشانی ماہواری یا ہیض (Menses) کا نہ آنا ہے، لیکن یاد رکھیں کہ ہمیشہ ماہواری یا حیض کے رکنے کی وجہ حمل نہیں ہوتی. اس لیے حمل کی تصدیق کرنے کیلئے حمل ٹیسٹ کروا لیں یا خود گھر پر کر لیں. آجکل حمل کی تصدیق کرنے والے ٹیسٹ میڈیکل سٹوروں پر باآسانی دستیاب ہیں. عموما خواتین حمل کی تصدیق کے ٹیسٹ دو طریقوں سے کر سکتی ہیں.

✤ آپ خود گھر پر ٹیسٹ کر سکتی ہیں.
✤ آپ کسی لیبارٹری یا ڈاکٹر سے ٹیسٹ کروا سکتی ہیں.

لیکن اس آرٹیکل میں آپ گھریلو حمل ٹیسٹ کے طریقوں کے متعلق جان سکیں گی. گھریلو حمل ٹیسٹ آپکو ڈاکٹر یا لیباٹری کے مہنگے ٹیسٹوں سے ملتا جلتا نتیجہ دیتے ہیں. اس کے علاوہ گھریلو حمل ٹیسٹ وقت اور پیسے کی بچت کا بھی ذریعہ ہیں.

گھرپر حمل ٹیسٹ کیسے کریں؟

جب حمل ٹھہر جاتا ہے تو حاملہ عورت کے جسم اور خون میں چند مخصوص قسم کے ہارمونز پیدا ہو جاتے ہیں. یہ ہارمون عورت کے خون کے ساتھ ساتھ پیشاب میں بھی پائے جاتے ہیں. اور حمل ٹیسٹ انہی ہارمونز کی موجودگی یا غیر موجودگی کو ظاہر کرتا ہے.

میڈیکل سٹوروں پر ملنے والے حمل ٹیسٹ عام طور پر ایک پٹی پر مشتمل ہوتا ہے، جسے پیشاب میں ڈبو کر چیک کیا جاتا ہے. اس کا مکمل طریقہ کار پیکٹ پر درج ہوتا ہے، اور مختلف کمپنیوں کے حمل ٹیسٹ کا طریقہ کار مختلف ہو سکتا ہے. تاہم ان کا بنیادی طریقہ ایک ہی ہوتا ہے اور یہ نہایت آسان ہے.

پریگینسی سٹرپ کے ذریعے حمل کی تصدیق کا طریقہ کار


میڈیکل سٹوروں سے ملنے والے حمل ٹیسٹ سے حاملہ ہونے کی تصدیق کیلئے اس طریقہ کار پر عمل کریں.

ایک صاف برتن میں پیشاب کا نمونہ جمع کریں. پریگینسی سٹرپ کو پیکٹ سے نکالیں اور اسے پیشاب کے نمونے کے اندر اس طرح ڈالئے کہ تیر کا نشان پیشاب کی جانب ہو.

خیال رہے کہ کہ پیشاب کی سطح تیر کے نشان کے نیچے بنی ہوئی لائن سے نیچے رہے. اسکے علاوہ پریگینسی سٹرپ کو پیکٹ سے نکالنے کے فورا بعد استعمال کر لینا چاہیے. اگر سٹرپ کو پیکٹ سے نکالے ہوئے 1 گھنٹہ سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہو تو اس سے ٹیسٹ کے نتیجے پر منفی اثر پڑتا ہے.

پانچ سیکنڈ بعد پٹی یا سٹرپ کو باہر نکال لیجیئے اور اسے نتیجہ ظاہر ہونے کیلئے پانچ منٹ تک رکھ دیں.

مثبت نتیجہ: اگر پٹی پر لال رنگ کے دو واضع لائنیں ظاہر ہو جائیں تو آپ حاملہ ہیں.
منفی نتیجہ: اگر پٹی پر لال رنگ کی صرف ایک لائن ظاہر ہو تو یہ حاملہ نہ ہونے کی علامت ہے.
بے نتیجہ: اگر پٹی پر کوئی لائن ظاہر نہ ہو یا ہلکی سی لائن ظاہر ہو تو اس ٹیسٹ کو پیشاب کے نئے نمونے اور نئے سامان کے ساتھ دوبارہ دہرائیں.

اگرچہ پریگینسی سٹرپ سے گھر پر حمل ٹیسٹ کرنا بہت آسان ہے، لیکن پیکٹ پر درج ہدایات غور سے نہ پڑھنے کی صورت میں نیتجہ غلط بھی ہو سکتا ہے. بعض اوقات طریقہ کار پر عمل کرنے کے باوجود ٹیسٹ کا نتیجہ غلط آ سکتا ہے، لیکن ایسا بہت کم ہوتا ہے. اگر حمل کا ٹیسٹ مثبت آئے تو ڈاکٹر سے فوری طور پر مشورہ کریں.

گھریلو حمل ٹیسٹ

حمل کی تصدیق یا جانچنے کیلئے گھریلو حمل ٹیسٹ آجکل خواتین میں بہت مقبول ہیں، کیونکہ ان گھریلو ٹیسٹوں سے خواتین گھر بیٹھے ہی منٹوں میں حمل کے متعلق پتا لگا سکتی ہیں. ترقی یافتہ ممالک میں عام طور پر گھریلو طریقہ ہی معروف ہے. خواتین میں مقبول اور درست نتیجہ دینے والے چند گھریلو حمل ٹیسٹ مندرجہ ذیل ہیں.

ایک ڈسپوز ایبل کپ میں پیشاب کی کچھ مقدار لیں اور اس میں پائن سول کے 3 چمچ ڈال کر آدھے گھنٹے کیلئے چھوڑ دیں. اگر پیشاب کی رنگت تبدیل ہوجائے تو اس کا مطلب ہے کہ آپ حاملہ ہیں.

ککروندا (Dandelion) کے چند پتے لیں اور انہیں ایک پلاسٹک بیگ میں ڈال کر کچھ گھنٹوں کیلئے سایہ دار چگہ پر رکھ دیں. پھر ایک برتن میں پیشاب کا نمونہ لیں، اور اس میں پتوں کو 10 سیکنڈ تک ڈپ کریں. اگر 20 منٹ بعد پتوں پر سرخ دھبے نمودار ہوں تو سمجھ لیں آپ حاملہ ہیں.

پیا لے میں پیشاب کا نمونہ لیں اور اس میں 1 چمچ چینی کی ڈالن اور چند منٹ انتظار کریں. اگر چینی حل ہو جائے تو آپ حاملہ نہیں ہیں. اور اگر چینی پیشاب میں حل نہیں ہوئی تو آپ حاملہ ہیں، کیونکہ حاملہ عورت کے پیشاب میں پایا جانے والا ایچ سی جی ہارمون چینی کو پیشاب میں حل نہیں ہونے دیتا.

رات کو سونے سے قبل ایک برتن میں تقریبا آدھا کپ سرکہ لیں اور اس میں اتنی ہی مقدار میں پیشاب کا نمونہ ملا لیں. صبح اگر پیشاب کا رنگ تبدیل ہو چکا ہو تو حمل ٹھہرنے کی نشانی ہے.

کسی برتن میں 1 چمچ پیشاب کا نمونہ لیں اور اس میں 2 چمچ کھانے کا سوڈا ڈالیں. اگر محلول میں بلبلے بننے لگیں جیسے سوڈا کی بوتل کھولتے وقت بنتے ہیں تو آپ حاملہ ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں