لو بلڈ پریشر

ads

جسم میں خون کے بہاؤ کی وجہ سے شریانوں پر جو دباؤ پڑتا ہے اسے بلڈ پریشر کہا جاتا ہے، اور شریانوں پر یہ دباؤ دل کے بائیں بطن (Left Ventricle) کے سکڑنے یا پھیلنے کی وجہ سے پڑتا ہے. میڈیکل سائنس میں دل کے بائیں بطن کے سکڑنے پر جو دباؤ پڑتا ہے اسے سسٹولک پریشر (Systolic Pressure) کہتے ہیں اور بطن کے پوری طرح سکڑنے کے بعد دوبارہ اپنی اصلی حالت میں واپس آتے وقت شریانوں پر جو دباؤ پڑتا ہے اسے ڈایاسٹولک پریشر(Diastolic Pressure) کہتے ہیں.

سسٹولک اور ڈایاسٹولک دباؤ دو نمبروں پر مشتمل ہوتا ہے اور اسے ناپنے کیلئے آلہ جسے عام طور پر بی پی آپریٹس اور انگریزی میں (Sphygmomanometer) کے نام سے جانا جاتا ہے. اس آلے پر مرکری کا نیچے والا نمبر اگر 70 / 90 اور اوپر کا 130 / 110 کے درمیان ہو تو بلڈ پریشر نارم تصور کیا جاتا ہے، اگر اس سے زیادہ ہو تو اسے ہائی بلڈ پریشر (High Blood Pressure) اور کم ہو تو لو بلڈپریشر (Low Blood Pressure) کہتے ہیں۔

لو بلڈ پریشر

جب کسی فرد کا بلڈ پریشر 120 / 80 مرکری سے کم ہو جائے تو اسے لو بلڈ پریشر یا ہائپو ٹینشن کہتے ہیں. لو بلڈ پریشر کے مرض میں انسانی جسم میں خون کے دباؤ میں کمی واقع ہو جاتی ہے، جو بعض اوقات موت کا سبب بھی بن سکتی ہے. اس کم دباؤ کی وجہ سے دماغ کی طرف خون کی رسد کم ہونے لگتی ہے اور رسد کم ہونے کی وجہ سے دماغ کو مطلوبہ آکسیجن کی مقدار میں تعطل پیدا ہوتا ہے.

یاد رہے کہ اگر انسانی دماغ کو چند سیکنڈ تک آکسیجن کی فراہمی معطل ہو جائے تو بے ہوشی طاری ہو جاتی ہے اور اگر یہ خلل منٹوں میں بدل جائے تو انسانی دماغ مردہ ہو جاتا ہے اور یوں پورا جسم ہی موت کے منہ میں چلا جاتا ہے.

مندرجہ ذیل میں لو بلڈ پریشر کی اقسام، وجوحات، علامات، لو بلڈ پریشر کو نارمل رکھنے کی ٹپس اور گھریلو ٹوٹکے بتائے گئے ہیں جن کو اپنا کر آپ لو بلڈ پریشر کو نارمل کر سکتے یا سکتی ہیں.

لو بلڈ پریشر کی اقسام


لو بلڈ پریشر (ہائپو ٹینشن) کو مندرجہ ذیل 3 اقسام میں تقسیم کیا جاتا ہے.

✤ اورتھواسٹیٹک لو بلڈ پریشر (Orthostatic Hypotension)
لو بلڈ پریشر کی اس قسم میں کچھ وقت کے لئے بیٹھے یا لیٹے رہنے کے بعد فوراً کھڑے ہونے سے اچانک خون کا دباﺅ کم ہوجاتا ہے. اس قسم کا لو بلڈ پریشر کچھ سکینڈز سے لے کر منٹوں تک رہتا ہے اور پھر خود بخود نارمل ہوجاتا ہے.

✤ اعصابی لو بلڈ پریشر (Neurally Mediated Hypotension)
لوبلڈ پریشر کی اس قسم نوجوان لڑکیوں یا لڑکوں اور چھوٹے بچوں کو متاثر کرتی ہے. اس قسم میں متاثرہ فرد کو کام کے دروان اچانک چکر سا محسوس ہونے کے بعد ابکائی اور پھر الٹی آتی ہے اور وہ اپنے ہوش و حواس کھو دیتا ہے.

✤ شاک (Shock)
لو بلڈ پریشر کی اس قسم میں خون کا دباﺅ کافی حد تک گر جاتا ہے اور جسمانی اعضاء کے خلیات آکسیجن کے لئے ترسنے لگتے ہیں اور دماغ، دل، گردوں، جگر، آنکھوں اور دوسرے جسمانی اعضاء کو تازہ آکسیجن کی فراہمی میں کمی واقع ہو جاتی ہے اوراعضاء اپنا کام اچھی طرح انجام نہیں دے سکتے. لو بلڈ پریشر کی یہ قسم جان لیوا بھی ثابت ہوسکتی ہے.

لو بلڈ پریشر کی وجوحات


بلڈ پریشر لو ہونے کی بہت سی وجوحات ہو سکتی ہیں جن میں سے چند عام مندرجہ ذیل ہیں.

✤ عورتوں میں لو بلڈ پریشر کی وجوحات: حیض کی زیادتی کے سبب جسم سے خون کا زیادہ اخراج، ایکسیڈنٹ، زخم یا آپریشن کے نتیجے میں جسم سے بہت زیادہ خون نکلنا، دست یا قے کی زیادتی، جسم میں پانی کی کمی ہونا، نقص تغذیہ، جسم میں وٹامن اور نمکیات کی کمی، گھریلو الجھنیں، پریشانیاں اور تفکرات وغیرہ ہو سکتی ہیں.

✤ مردوں میں لو بلڈ پریشر کی وجوحات: پسینہ کا زیادہ آنا، جسم میں پانی کی کمی، جسمانی کمزوری، ایکسڈنٹ یا چوٹ لگنے کے سبب جسم سے خون کا بہت زیادہ نکل جانا، نشہ آور ادویات کا استعمال، پریشانی یا ذہنی دباؤ وغیرہ ہو سکتی ہیں.

لوبلڈ پریشر کی علامات


سر درد یا سر چکرانا، آنکھوں کے اگے اندھیر چھا جانا، متلی یا قے ہونا، نیند میں کمی، بے چینی، بے قراری، کام کاج کرتے ہوئے جلد تھک جانا، سینے یا چھاتی میں درد، ہاتھوں اور پیروں کا سن ہو جانا، پیشاب کا بار بار یا رک کر آنا وغیرہ لو بلڈ پریشر کی علامات ہو سکتی ہیں.

لو بلڈ پریشر کو نارمل کیسے رکھا جائے؟

اگر آپ کا بلڈ پریشر نامل سے کم رہتا ہے تو مندرجہ ذیل ٹپس پر عمل کر کے آپ لو بلڈ پریشر کو نامل رکھ سکتے یا سکتی ہیں.

جن افراد کو لو بلڈ پریشر کا مسلہ ہو وہ سب سے پہلے اپنا لپڈ پروفائل (Lipid Profile) چیک کروا کر مفید اور نقصان دہ کولیسٹرول تناسب کا جائزہ لیں. کسی ڈاکٹر سے مشورہ کریں اور اس کی ہدایات پرعمل کریں. کیونکہ خون کا گاڑھا پن صرف ہائی بلڈ پریشر کا باعث نہیں بنتا بلکہ بلڈ پریشر لو بھی کر سکتا ہے.

وٹامن اور آئرن سے بھرپور غذائیں کھائیں، گوشت، انڈا، کلیجی، چکنائی، تلی ہوئی غذائیں، مکھن، گھی، پنیر بالائی ملا دودھ اور بیکری مصنوعات اور انرجی ڈزنکز وغیرہ کھانے سے مکمل پرہیز کریں. اپنی روز مرہ خوراک میں تازہ پھل کھائیں اور سبزیاں مثلاً پیاز، چقندر اور ٹماٹر کو بطورِ سلاد لازمی استعمال کریں.

اسکے علاوہ دن میں کم از کم 8 گلاس پانی پئیں تاکہ جسم میں پانی کی کمی نہ ہونے پائے. خوردنی نمک کا استعمال بھی کم سے کم کیا جائے کیونکہ یہ خون کی شریانوں کو سخت اور تنگ کرنے کے علاوہ ہائی بلڈ پریشر کا سبب بھی بنتا ہے.

نشہ آور ادویات اور سگریٹ کا استعمال ہرگز نہ کریں، صبح کی سیر اور ہلکی پھلکی ورزش کو معمول بنا لیں. خوش رہیں اور مثبت سوچ اپنائیں، حسد ،کینہ ،بغض، غصہ او ر نفرت کے جذبات سے بھی خود کو دور رکھیں. انشاء اللہ لو بلڈ پریشر سے چھٹکارا مل جائے گا اور صحت و تندرستی آپ کے قدم چومے گی.

لو بلڈ پریشر کیلئے گھریلو ٹوٹکے

احتیاطی تدابیر کے ساتھ ساتھ آپ مندرجہ ذیل میں بتائے گئے گھریلو ٹوٹکے بھی استعمال کر سکتی یا سکتے ہیں. لو بلڈ پریشر کیلئے بتائے گئے ٹوٹکے قدرتی اجزاء پر مشتمل ہیں اور یہ آپکی صحت کو کوئی نقصان نہیں پہنچائیں گے.

ایک کپ گرم پانی میں 1 لیموں کا رس، 2 چائے کے چمچ شہد اور ایک چٹکی لونگ پاؤڈر ملا لیں. تمام اجزاء کو اچھی طرح مکس کر لیں اور ایک گھونٹ میں ہی پی جائیں. اس نسخے کو ایک ہفتے تک باقائدہ استعمال کرنے سے لو بلڈ پریشر نارمل ہو جائے گا.

ایک چوتھائی چمچ لہسن کے رس کو 1 کھانے کے چمچ شہد میں ملا کر کھانے سے چند دن میں لو بلڈ پریشر نارمل ہو جاتا ہے.

اگر آپ کا بلڈ پریشر زیادہ تر لو رہتا ہے تو 1 کھانے کا چمچ چھوٹی مکھی کے شہد کو 1 گلاس نیم گرم دودھ میں ملا کر روزانہ رات کو سونے سے پہلے پئیں. اس سے نہ صرف آپ کا بلڈ پریشر نارمل رہے گا بلکہ آپ صحت مند اور تندرست رہیں گے.

ایک پاؤ خشک دھنیہ اور 1 پاؤ سونف لے کر ان کا سفوف (پھکی) بنا لیں. ایک چمچ صبح نہار منہ پانی کے ساتھ کھائیں اور آدھے گھنٹے بعد ناشتہ کر لیں، پھر رات کے کھانے سے آدھا گھنٹہ پہلے ایک چمچ کھائیں. چند دن کے باقائدہ استعمال سے لو بلڈ پریشر نارمل ہو جائے گا.

دیکچی میں 1 کپ دودھ، آدھا کپ پانی، خشک دھنیہ 1 چوتھائی چمچ، ہلدی 1 چوتھائی چمچ، ادرک پاؤڈر 1 چٹکی، 2 چمچ چینی اور 1 چٹکی الائچی پاؤڈر ڈال کر اچھی طرح ابال لیں. اچھی طرح ابال دینے کے بعد محلول کو چھان لیں اور گرم گرم ہی پی جائیں. روزانہ 1 بار پینے سے بہت جلد لو بلڈ پریشرکا مرض ٹھیک ہو جائے گا.

کسی برتن میں 1 گلاس پانی ڈال کا ابال لیں. ابال آنے پر پانی میں 2 عدد لونگ اور 4 عدد کالی مرچ ڈال کر اتنا ابالیں کہ پانی آدھا رہے جائے. اسکے بعد اسے چھان لیں اور گرم گرم پئیں. ایک ہفتے تک باقائدہ استعمال سے لو بلڈپریشر نارمل ہو جائے گا.

اپنا تبصرہ بھیجیں